18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کوئٹہ میں فائرنگ سے چار پولیس اہلکار ہلاک

پولیس اہلکار ایک جائے وقوعہ پر۔ – فائل فوٹو اے پی

کوئٹہ: ہفتہ کے روز کوئٹہ کےعلاقے غوث آباد میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے اے ایس آئی سمیت چار پولیس اہلکار ہلاک ہوگئے۔

پولیس کے مطابق نامعلوم مسلح افراد نے سٹیلایٹ ٹاون کے علاقے میں پولیس کی گاڑی پر فائرنگ کی جس کے باعث تین اہلکار جائے وقوعہ پر ہی جان کی بازی ہارگئے۔

فائرنگ کے واقعے میں چوتھا زخمی اہلکار زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے اسپتال میں چل بسا۔ سی سی پی کوئٹہ میر زبیر محمود کہتے ہیں کہ پولیس عوام کے تحفظ کیلئے قربانیاں دے رہی ہیں۔

پولیس کی گاڑی علاقے میں معمول کی گشت پر تھی کہ اس پر فائرنگ کی گئی اور حملہ آور جائے وقوعہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

واقعے کے بعد پولیس اور فرنٹیئر کور نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر تحقیقات شروع کردیں۔

ابتک کسی گروہ کیجانب سے اس واقعہ کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی ہے۔

اس حصے سے مزید

بلوچستان: کیچ میں دھماکے سے سیکیورٹی اہلکار قتل

بلوچستان کے ضلع کیچ میں بم دھماکے سے ایک سیکورٹی اہلکار ہلاک ہو گیا، گاڑی مکمل طور پر تباہ ہو گئی۔

بلوچستان کے تین وزراء کے خلاف نیب کی تفتیش کا آغاز

نیب کے ڈائریکٹر سید خالد اقبال کا کہنا تھا کہ ہم تین وزراء کے خلاف کرپشن میں ملؤث ہونے کی شکایات کی تصدیق کررہے ہیں۔

بلوچستان: سیکیورٹی کانفرنس میں امن و امان کی صورتحال پر تبادلہ خیال

کانفرنس کے دوران ایف سی کا کہنا تھا کہ وہ امن کی بحالی کے لیے پولیس اور دیگر اداروں کے سات تعاون کرنے کے لیے تیار ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔