20 اپريل, 2014 | 19 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

مارچ ہر صورت ہوگا، ڈاکٹر طاہر القادری

عدالتی فیصلوں کے بعد لانگ مارچ کو روکنا توہین عدالت ہوگا، بم دھماکہ ہوا تو ذمہ دار صدر اور وزیراعظم ہونگے، سربراہ ٹی ایم کیو۔ اے پی فوٹو۔
عدالتی فیصلوں کے بعد لانگ مارچ کو روکنا توہین عدالت ہوگا، بم دھماکہ ہوا تو ذمہ دار صدر اور وزیراعظم ہونگے، سربراہ ٹی ایم کیو۔ اے پی فائل فوٹو۔

لاہور: تحریک منہاج القرآن (ٹی ایم کیو) کے سربراہ علامہ طاہرالقادری نے واضح کیا ہے کہ لانگ مارچ کسی قیمت پرنہیں رکے گا۔

لاہور میں جمعے کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے طاہرالقادری نے کہا کہ لانگ مارچ کو غیر آئنی و غیر قانونی قرار دینے کی تین درخواستیں اعلٰی عدلیہ نے مسترد کردی ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ عدالتی فیصلوں کے بعد لانگ مارچ کو روکنا توہین عدالت ہوگا۔

طاہر القادری نے اعلان کیا کہ اگر لانگ مارچ میں کوئی دھماکا ہوا تواس کے ذمہ دار صدر زرداری، وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، وزیر داخلہ رحمان ملک، مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف اور وزیراعلٰی پنجاب شہباز شریف اور وزیر قانون پنجاب رانا ثنااللہ ہونگے۔

ٹی ایم کیو کے سربراہ نے ملک میں جاری دہشتگردی پروفاقی و پنجاب کوسخت تنقید کانشانہ بنایا۔ ان کا کہنا تھا دونوں حکومتیں خود دہشتگردی کرانے میں ملوث ہیں یا اسے روکنے کی اہلیت نہیں رکھتیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ کسی صورت لانگ مارچ سے پیچھے نہیں ہٹیں گے، دھماکے اور گولیاں انکا راستہ نہیں روک سکتیں۔

اس حصے سے مزید

'دہشت گردی ختم کیے بغیر مضبوط دفاع کا قیام ناممکن'

مضبوط معیشت اور دہشت گردی ختم کیے بغیر ملکی دفاع کا قیام ناممکن ہے،وزیر اعظم کا کاکول اکیڈمی میں پاسنگ آؤٹ پریڈ سے خطاب

پنجگور: ایف سی سے فائرنگ کا تبادلہ، تین عسکریت پسند ہلاک

سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپوں کے نتیجے میں متعدد عسکریت پسند زخمی بھی ہوئے، ترجمان فرنٹیئر کورپس ۔

معروف صحافی حامد میر قاتلانہ حملے میں زخمی

سینئر صحافی اور مایہ ناز ٹیلی ویژن اینکر پرسن حامد میر قاتلانہ حملے میں زخمی ہو گئے، حالت خطرے سے باہر۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Mohammad Jehangir
11 جنوری, 2013 13:43
اقبال جہانگیر کا تازہ بلاگ : لانگ مارچ پر حملہ کا منصوبہ http://www.awazepakistan.wordpress.com
مقبول ترین
بلاگ

سچ، گولی اور بے بس جرنلسٹ

حامد میر پر حملہ ایک بار پھر صحافی برادری کی بے بسی کی طرف اشارہ کرتا ہے

2 - پاکستان کی شہری تاریخ ... ہمیں سب ہے یاد ذرا ذرا

بھٹو حکومت کے ابتدائی سالوں میں قوم کا مزاج یکسر تبدیل ہو گیا تھا، کیونکہ ملک ایک نئے پاکستان کی طرف بڑھ رہا تھا-

دو قومی نظریہ اور ہندوستانی اقلیتیں

دو قومی نظریہ مسلمانوں اور ہندوؤں میں تو تفریق کرتا ہے لیکن دیگر اقلیتوں، خاص کر دلتوں کو یکسر فراموش کرتا ہے۔

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔