25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

مارچ ہر صورت ہوگا، ڈاکٹر طاہر القادری

عدالتی فیصلوں کے بعد لانگ مارچ کو روکنا توہین عدالت ہوگا، بم دھماکہ ہوا تو ذمہ دار صدر اور وزیراعظم ہونگے، سربراہ ٹی ایم کیو۔ اے پی فوٹو۔
عدالتی فیصلوں کے بعد لانگ مارچ کو روکنا توہین عدالت ہوگا، بم دھماکہ ہوا تو ذمہ دار صدر اور وزیراعظم ہونگے، سربراہ ٹی ایم کیو۔ اے پی فائل فوٹو۔

لاہور: تحریک منہاج القرآن (ٹی ایم کیو) کے سربراہ علامہ طاہرالقادری نے واضح کیا ہے کہ لانگ مارچ کسی قیمت پرنہیں رکے گا۔

لاہور میں جمعے کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے طاہرالقادری نے کہا کہ لانگ مارچ کو غیر آئنی و غیر قانونی قرار دینے کی تین درخواستیں اعلٰی عدلیہ نے مسترد کردی ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ عدالتی فیصلوں کے بعد لانگ مارچ کو روکنا توہین عدالت ہوگا۔

طاہر القادری نے اعلان کیا کہ اگر لانگ مارچ میں کوئی دھماکا ہوا تواس کے ذمہ دار صدر زرداری، وزیراعظم راجہ پرویز اشرف، وزیر داخلہ رحمان ملک، مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف اور وزیراعلٰی پنجاب شہباز شریف اور وزیر قانون پنجاب رانا ثنااللہ ہونگے۔

ٹی ایم کیو کے سربراہ نے ملک میں جاری دہشتگردی پروفاقی و پنجاب کوسخت تنقید کانشانہ بنایا۔ ان کا کہنا تھا دونوں حکومتیں خود دہشتگردی کرانے میں ملوث ہیں یا اسے روکنے کی اہلیت نہیں رکھتیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ کسی صورت لانگ مارچ سے پیچھے نہیں ہٹیں گے، دھماکے اور گولیاں انکا راستہ نہیں روک سکتیں۔

اس حصے سے مزید

افتخار چوہدری ن لیگ کے 'اوپننگ بیٹسمین' قرار

حکمران جماعت کی طرف سے تمام مبینہ حکمت عملی کے باوجود چودہ اگست کو اسلام آباد میں مارچ کریں گے، شیریں مزاری

بلوچستان: ڈھائی سال میں پہلا پولیو کیس

یونیسیف کے مطابق پولیو وائرس کا شکار 18 ماہ کی بچی کا خاندان رواں سال کراچی سے قلعہ عبداللہ منتقل ہوا تھا۔

کامران خان نے بھی جیونیوز چھوڑ دیا

صحافی برادری سے تعلق رکھنے والے ذرائع کا کہنا ہے کہ کامران خان عنقریب آنے والے میڈیا گروپ ’’بول‘‘ سے وابستہ ہو رہے ہیں۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Mohammad Jehangir
11 جنوری, 2013 13:43
اقبال جہانگیر کا تازہ بلاگ : لانگ مارچ پر حملہ کا منصوبہ http://www.awazepakistan.wordpress.com
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-