18 اپريل, 2014 | 17 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

کراچی سمیت کئی شہروں میں ہنگامہ آرائی

حیدرآباد کے ایک تجارتی علاقے میں وزیرِ اعظم کی گرفتاری کی اطلاعات کےبعد مظاہرین نے موٹر سائیکل کو آگ لگائی ہوئی ہے۔ اے ایف پی تصویر
حیدرآباد کے ایک تجارتی علاقے میں وزیرِ اعظم کی گرفتاری کی اطلاعات کےبعد مظاہرین نے موٹر سائیکل کو آگ لگائی ہوئی ہے۔ اے ایف پی تصویر

کراچی: سپریم کورٹ کی جانب سے وزیرِ اعظم گرفتار کرنے کے احکامات کے بعد ملک بھر اور خصوصاً سندھ کے کئی شہروں میں احتجاج جاری ہے۔

کراچی کے کئی علاقوں میں فائرنگ اور ہنگامہ آرائی کے بعد ان علاقوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ ڈالمیا، شاہراہِ فیصل اور دیگر علاقوں میں مظاہرین نے فائرنگ کی اور ٹائر جلائے۔ کراچی کی مشہور بولٹن مارکیٹ اور اس سے وابستہ اہم تجارتی مراکز بھی بند کرادئے گئے۔

کراچی میں جامعہ کلاتھ اور اطراف کی مارکیٹیں بھی بند کرادی گئی ہیں۔

تازہ ترین اطلاعات کے مطابق کراچی میں ٹاور کے مقام پر نامعلوم افراد کی فائرنگ اور ہنگامہ آرائی سے علاقے میں ٹریفک جام ہوگیا ہے۔

دوسری جانب ماڑی پور روڈ پر بھی پتھراؤ اور جلاؤ کے واقعات ہوئے ہیں۔ کراچی میں شارع فیصل پر اس وقت شدید ٹریفک جام ہوگیا جب ڈنڈا بردار افراد نے دونوں ٹریکس پر جلاؤ گھیراؤ کیا ۔ دوسری جانب ٹریفک جام کے دوران لوٹ مار کے واقعات کی بھی اطلاعات ہیں۔

لاڑکانہ ، دادو، شہداد پور اور دیگر شہروں میں فائرنگ ، ٹائرجلانے اور احتجاج کے بعد اہم کاروباری مراکز کے بند ہونے کی اطلاعات ہیں۔

سکھر میں پیپلز پارٹی کے کارکن بڑی تعداد میں سڑکوں پر نکل آئے اور احتجاجی مظاہرے کئے۔

اس حصے سے مزید

تحفظ پاکستان آرڈیننس سینیٹ میں پیش، اپوزیشن کا احتجاج

اپوزیشن کے شدید احتجاج کے باوجود وفاقی حکومت نے تحفظ پاکستان بل 2014 کو سینیٹ میں پیش کر دیا ہے۔

پاکستانی فوج قومی اثاثہ ہے، خواجہ آصف

وزیر دفاع نے گزشتہ بیان پر اپنی غلطی تسلیم کرتے ہوئے واضح کیا کہ مضبوط اور قابل احترام فوج قوم کا اثاثہ ہے۔

سپریم کورٹ نے نیب چیئرمین تقرری کو قانونی قرار دیدیا

دوسری جانب بیرسٹر اعتزاز احسن نے اپنے دلائل میں کہا کہ حکومت اور اپوزیشن دونوں ہی نیب چیئرمین کی تقرری پر متفق ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔

میانداد کا لازوال چھکا

جب بھی کوئی بیٹسمین مقابلے کی آخری گیند پر اپنی ٹیم کو چھکے کے ذریعے جتواتا ہے تو سب کو شارجہ ہی یاد آتا ہے۔

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔