21 اپريل, 2014 | 20 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

'قادری کے دھرنے پر لال مسجد جیسا آپریشن زیر غور تھا'

پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنما چوہدری شجاعت حسین۔ فائل فوٹو۔۔۔
پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنما چوہدری شجاعت حسین۔ فائل فوٹو۔۔۔

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ق کے صدر چوہدری شجاعت نے انکشاف کیا ہے کہ بعض حکومتی عہدیدار طاہر القادری کے دھرنے کے آپریشن کی تیاریاں مکمل کرچکے تھے اگر مداخلت نہ کرتے تو اسلام آباد میں لال مسجد سے بڑا خون خرابہ ہوتا۔

منگل کو لاہور میں پریس کانفرنس میں چوہدری شجاعت کا کہنا تھا کہ سولہ جنوری کو طاہر القادری کے دھرنے کے شرکا کے خلاف طاقت کے استعمال کا فیصلہ ہوچکا تھا۔

انکا کہنا تھا کہ موقع کی نزاکت جانتے ہوئے انہوں نے مذاکرات کے لئے وزیراعظم سے خود بات کی تھی۔

چوہدری شجاعت نے کہا کہ طاہر القادری کے ساتھ ہونے والے مذاکرات کے مطابق شفاف انتخابات ہونگے۔

مسلم لیگ ق کے رہنما مشاہد حسین سید نے کہا کہ چوہدری شجاعت نے اسلام آباد معاہدے کے ذریعے ملک کو ایک بڑےسانحے سے بچالیا۔

چوہدری شجاعت کا کہنا تھا کہ نگران حکومت کے لئے اتحادیوں سے بات چیت جاری ہے تاہم ان کا کہنا تھا کہ طاہرالقادری خود الیکشن میں حصہ نہیں لیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر ان کی جماعت الیکشن کا حصہ بنی تو ان سے انتخابی اتحاد کے متعلق ابھی کچھ نہیں سوچا۔

اس حصے سے مزید

'طالبان کے مطالبات قبول کرنے میں کوئی حرج نہیں'

جماعتِ اسلامی کے امیر سراج الحق کا کہنا تھا کہ حکومت کو چاہیے کہ وہ مطالبات پر سنجیدگی سے غور کرے۔

وزیر اعظم کیخلاف توہینِ عدالت کی درخواست مسترد

لاہور ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں مؤقف اختیار کیا کہ وزیرِ اعظم کو آئین کے تحت استثنیٰ حاصل ہے۔

ڈیرہ غازی خان: ٹریفک حادثے میں 14 ہلاکتیں

یہ واقعہ ڈیرہ غازی خان کے علاقے کوٹ چٹھہ میں اس وقت پیش آیا جب ایک تیز رفتار بس اسٹاپ پر کھڑے لوگوں پر چڑھ گئی۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

دنیاۓ صحافت: داستاں تک بھی نہ ہوگی داستانوں میں

ایک فوجی کی طرح صحافی کو بھی ہرگز اکیلا نہیں چھوڑا جاسکتا، یہ سوچنا کہ یہ ہماری جنگ نہیں، سراسر حماقت ہے-

2 - پاکستان کی شہری تاریخ ... ہمیں سب ہے یاد ذرا ذرا

بھٹو حکومت کے ابتدائی سالوں میں قوم کا مزاج یکسر تبدیل ہو گیا تھا، کیونکہ ملک ایک نئے پاکستان کی طرف بڑھ رہا تھا-

سچ، گولی اور بے بس جرنلسٹ

حامد میر پر حملہ ایک بار پھر صحافی برادری کی بے بسی کی طرف اشارہ کرتا ہے

دو قومی نظریہ اور ہندوستانی اقلیتیں

دو قومی نظریہ مسلمانوں اور ہندوؤں میں تو تفریق کرتا ہے لیکن دیگر اقلیتوں، خاص کر دلتوں کو یکسر فراموش کرتا ہے۔