25 اپريل, 2014 | 24 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

'قادری کے دھرنے پر لال مسجد جیسا آپریشن زیر غور تھا'

پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنما چوہدری شجاعت حسین۔ فائل فوٹو۔۔۔
پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنما چوہدری شجاعت حسین۔ فائل فوٹو۔۔۔

لاہور: پاکستان مسلم لیگ ق کے صدر چوہدری شجاعت نے انکشاف کیا ہے کہ بعض حکومتی عہدیدار طاہر القادری کے دھرنے کے آپریشن کی تیاریاں مکمل کرچکے تھے اگر مداخلت نہ کرتے تو اسلام آباد میں لال مسجد سے بڑا خون خرابہ ہوتا۔

منگل کو لاہور میں پریس کانفرنس میں چوہدری شجاعت کا کہنا تھا کہ سولہ جنوری کو طاہر القادری کے دھرنے کے شرکا کے خلاف طاقت کے استعمال کا فیصلہ ہوچکا تھا۔

انکا کہنا تھا کہ موقع کی نزاکت جانتے ہوئے انہوں نے مذاکرات کے لئے وزیراعظم سے خود بات کی تھی۔

چوہدری شجاعت نے کہا کہ طاہر القادری کے ساتھ ہونے والے مذاکرات کے مطابق شفاف انتخابات ہونگے۔

مسلم لیگ ق کے رہنما مشاہد حسین سید نے کہا کہ چوہدری شجاعت نے اسلام آباد معاہدے کے ذریعے ملک کو ایک بڑےسانحے سے بچالیا۔

چوہدری شجاعت کا کہنا تھا کہ نگران حکومت کے لئے اتحادیوں سے بات چیت جاری ہے تاہم ان کا کہنا تھا کہ طاہرالقادری خود الیکشن میں حصہ نہیں لیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر ان کی جماعت الیکشن کا حصہ بنی تو ان سے انتخابی اتحاد کے متعلق ابھی کچھ نہیں سوچا۔

اس حصے سے مزید

ملک آمریت کا متحمل نہیں ہوسکتا: خورشید شاہ

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ سیاستدان ماضی سے سبق سیکھ چکے ہیں اور ملک کی بقا کے لیے معمولی غلطیاں نظر انداز کرنی ہوں گی۔

دھرتی کا بیٹا ننانوے برس بعد لوٹ آیا

خوشونت سنگھ کی راکھ ان کے آبائی قصبے ہڈالی میں اس سکول کی دیوار میں رکھ دی گئی، جہاں انہوں نے ابتدائی تعلیم حاصل کی تھی

جماعت اسلامی کا طالبان سے مستقل جنگ بندی کا مطالبہ

امیرِ جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ گولیوں کے بجائے منطقی دلائل کا تبادلہ کیا جانا چاہیٔے۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

تھری جی: اسکیل، رفتار اور بھروسے کا سوال

دیکھا جائے تو یہ سارا بکھیڑا بنیادی طور پر صرف ساٹھ لاکھ صارفین کے لئے ہے-

مقدّس ریپ

دو دن وہ اسی گاؤں میں ماں کے بازؤں میں تڑپتی رہی۔ گھر میں پیسے ہی کہاں تھے کہ علاج کے لئے بدین تک ہی پہنچ پاتے۔

کیپٹن امیریکہ: دی ونٹر سولجر -- ایک اور سیکوئل

ایک لازمی سیکوئل ہونے کے ناطے، فلم کو دلکش، سادہ اور قابل قبول ہونے کی نیت کے ساتھ بنایا گیا ہے۔

میڈیا اور نقل بازی کا کینسر

ایسا نہیں کہ میں کوئی پہلا انسان ہوں جس کے خیالات پر نقب لگائی گئی ہو، مگر آخری ضرور بننا چاہتا ہوں