26 جولائ, 2014 | 27 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

ممبئی حملے: ماسٹر مائنڈ کو دی گئی سزا ناکافی قرار

ڈیوڈ ہیڈلی کے وکیل رپورٹرز سے بات چیت کر رہے ہیں۔ فوٹو اے پی۔۔۔

نئی دہلی: ہندوستان کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ 2008 میں ہونے والے ممبئی حملوں کی منصوبہ بندی کرنے والے امریکی شہری کو 35 سال قید سے بھی زیادہ سخت سزا دینے چاہیے تھی، اس کے ساتھ ساتھ انہوں نے اسے ہندوستان کے حوالے کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔

چکاگو میں جمعرات کو ہونے والی سماعت کے دوران باون سالہ ڈیوڈ ہیڈلی نے امریکی حکام سے تعاون کرتے ہوئے ممبئی حملوں کے اہداف کا تعین کرنے کا اعتراف کیا تھا اور اسی کے باعث وہ موت کی سزا سے بچ پائے تھے اور انہیں 35 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔

وزیر خارجہ سلمان خورشید نے ہندوستانی ٹی وی کو بتایا کہ اگر ہمارے بس میں ہوتا تو ہم اس کو مزید سخت سزا دیتے لیکن جج امریکہ میں انصاف کی فراہمی کے قوانین پر عمل درآمد کے پابند تھے۔

انہوں نے کہا کہ یہ تو محض ابتدا ہے، اس سے یہ پیغام پہنچانے میں مدد ملے گی کہ اس طرح کی کارروائیاں ہرگز برداشت نہیں کی جائینگی۔

گزشتہ نومبر ہندوستان نے ممبئی حملوں کے پاکستانی نژاد ملزم اجمل قصاب کو پھانسی دیدی تھی۔

ہیڈلی کو حوالے کرنے کے مطالبے کے سوال پر سلمان خورشید نے کہا کہ ہندوستان، امریکہ سے مسلسل ہیڈلی کو حولے کرنے کا مطالبہ کر رہا ہے۔

امریکی حکام کیس میں تعاون کرنے کے باعث ہیڈلی کو حوالے پر تیار نہیں ہیں، ہیڈلی کو 2009 میں شکاگو سے اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب وہ فلائٹ سے پاکستان کیلیے روانہ ہونے والے تھے۔

امریکی حکام نے کورٹ کو بتایا کہ ہیڈلی نے حکام سے تعاون کیا اور عسکریت پسند گروہ لشکر طیبہ کے حوالے سے اہم تفصیلات کی تھیں، ہندوستان نے لشکر طیبہ کو ان حملوں کا ذمے دار ٹھہرایا تھا۔

اس حصے سے مزید

ممبئی حملہ کیس کی سماعت ملتوی ہونے پر ہندوستان کا احتجاج

ہندوستان نے پاکستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کیا اور ممبئی حملہ کیس کی سماعت ملتوی ہونے پر احتجاج کیا۔

ہندوستان: سکول بس اور ٹرین میں تصادم، 12 بچے ہلاک

سکول بس توپران کے قریبی قصبے میں ککاتیہ ٹیکنو اسکوکے بچوں کو لے جارہی تھی کہ یہ حادثہ پیش آیا۔

شیوسینا کے ارکان اسمبلی نے ہندوستانی مسلمان کا روزہ تڑوادیا

واقعہ مہاراشترا حکومت کے سرکاری گیسٹ ہاؤس میں پیش آیا جہاں کچن کے نگران ارشد زبیر کو روٹی چبانے پر مجبور کیا گیا


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بلاگ

گھریلو تشدد: پاکستانی 'کلچر' - حقیقت کیا ہے؟

پاکستانی سماج میں عورت مرد کی جائداد اور اس سے کمتر ہے چناچہ اس کے ساتھ کسی قسم کا سلوک روا رکھنا مرد کا پیدائشی حق ہے-

ریاستی تنہائی اور اجتماعی مہاجرت

جب تک سوچنے اور سوچ کے اظہار کے لیے ممکنہ حد تک ازادی موجود نہ ہو تب تک سماج میں تکثیریت پروان نہیں چڑھ سکتی

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔